29

ڈیرہ غازیخان وائس چانسلرغازی یونیورسٹی ڈیرہ غازیخان پروفیسر ڈاکٹر محمد طفیل نے کہا ہے

کوالٹی ایجوکیشن صرف اور صرف فزیکل تعلیم اور امتحانات سے ہی ممکن ہے،پوری دنیا کے ساتھ پاکستان میں بھی کورونا کی وجہ سے فزیکل تعلیم ممکن نہ تھی لیکن بچوں کو تعلیمی نقصان سے بچانے کے لیے وقتی طور پر آن لائن تعلیم کااجراء کیاگیا اور جن بچوں نے اپنی پڑھائی مکمل کی ہے ان کے لیے آن لائن یا فزیکل امتحان میں کوئی فرق نہیں۔موجودہ حالات میں حکومت کی طرف سے یکم فروری سے یونیورسٹیز کھولنے کے احکامات جاری کیے گئے ہیں اس لیے امتحانات بھی فزیکل ہی ہونے چاہئیں اور یونیورسٹی انتظامیہ نے مڈ ٹرم امتحان فروری میں اور فائنل امتحان مزید دو ہفتے کا ٹائم دے کر مارچ میں لینے کا فیصلہ کیا ہے۔انہوں نے یہ بات مختلف شعبہ جات کے طلبہ کے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہی. طلبہ نے فروری میں ہونے والے فزیکل امتحانات سے متعلق اپنے تحفظات کا ذکر کیا اور گزارشات پیش کیں. اس موقع پر رجسٹرار ڈاکٹر اللہ بخش گلشن، ڈائریکٹر سٹوڈنٹس افیئرز ڈاکٹر محمد ابراہیم اور کنٹرولر امتحانات ڈاکٹر محمد مدثر مقبول بھی موجود تھے. رئیس جامعہ نے کہاکہ یونیورسٹی کوالٹی ایجوکیشن پرپختہ یقین رکھتی ہے اور اس پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کرے گی، طلباء کے لیے آن لائن تعلیم میں کسی بھی طرح کی کمی کو فزیکل کلاسز میں دور کیا جائے گا۔ اس ضمن میں اساتذہ کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔ وائس چانسلر نے طلبہ پر زور دیا کہ کوالٹی ایجوکیشن ہی آپ کی اور ملک و قوم کی ترقی کا واحد راستہ ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں